پنجاب میں آج سے9 دن تک اسمارٹ لاک ڈاؤن ، بازاراورمارکیٹیں بند

لاہور : کورونا کے خطرے کے پیش نظر حکومت پنجاب کی جانب سے عیدالاضحیٰ کے موقع پر آج سے 5 اگست تک اسمارٹ لاک ڈاؤن نافذ کردیا گیا ہے ۔
تفصیلات کے مطابق پنجاب بھر میں کورونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کے لیے کل رات بارہ بجے سے مارکیٹیں اور شاپنگ مالزبند کردی گئیں ۔ بیوٹی پالرز ، درزیوں کی دکانیں بھی بند رہیں گی ۔اعلان کے بعد عوام کی بڑی تعداد نے بازاروں اور مارکیٹوں کا رخ کرلیا جبکہ تاجروں نے حکومتی احکامات ہوا میں اڑا دیے اوررات بارہ بجے کے بعد تک شہریوں کی خریداری کا سلسلہ جاری رہا ۔ وزیراعلی ٰ پنجاب نے اسمارٹ لاک ڈاؤن کا جائزہ لینے کیلئے خود مارکیٹوں کا دورہ بھی کیا ۔
اسمارٹ لاک ڈاون کے حوالے سے وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان کا کہنا تھا کہ پانچ اگست تک مارکیٹوں اور بازاروں میں سخت لاک ڈاؤن رہے گا، عید الفطر والے ایس او پیز کا نفاذ اس عید پر بھی ہو گا، جبکہ تھیٹر، ریسٹورنٹس اور تفریحی مقامات کھولنے کا معاملہ محرم الحرام کے بعد زیر بحث لایا جائے گا۔ لاک ڈاؤن کے دوران میڈیکل، گروسری اسٹور، ٹرانسپورٹ اور دفاتر کھلے رہیں گے، کورونا وبا میں کمی کا گراف قائم رکھنے اور اس کے مکمل خاتمے تک احتیاط ضروری ہے۔ پنجاب حکومت نے یہ فیصلہ وزیر قانون پنجاب راجہ بشارت کی زیر صدارت کابینہ کمیٹی برائے انسداد کورونا کا اجلاس ایوان وزیراعلیٰ لاہور میں کیا ۔
گوجرانوالہ میں لاک ڈاؤن پرعملدرآمد کرانے کے لئے آپریشن شروع کر دیا گیا۔ مختلف مارکیٹیں بند کروادی گئیں جبکہ مزاحمت اور خلاف ورزی پر متعدد دکانداروں کو پولیس نے حراست میں لے لیا۔سندھ میں پارکس اورعوامی مقامات 4 اگست تک بند رکھنے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا گیا ۔
دوسری جانب انجمن تاجران پاکستان نے صوبائی حکومت کا مارکیٹیں بند کرنے کا فیصلہ مسترد کردیا ۔ سیکرٹری انجمن تاجران نعیم میر کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس تقریبا ختم ہوگیا ہے ،دکانیں ،مارکیٹس بند کر کے معاشی قتل کرنے کی تیاریاں کی جا رہی ہیں ۔
اس سے قبل حکومت پنجاب نے صوبہ کے چار شہروں میں کورونا ہاٹ سپاٹ علاقوں پر سمارٹ لاک ڈاؤن نافذ کیا تھا۔ حکام کا کہنا تھا کہ عید الاضحی سے پہلے بازاروں میں خریداری کی سرگرمیاں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کا سبب بن سکتی ہیں لہذا یہ فیصلہ عوام کی بہتری کیلئے کیا گیا ہے ۔
حکومت کا یہ اقدام ایک ایسے وقت میں سامنے آیا جب پنجاب میں گزشتہ 2 ماہ کے دوران پہلی مرتبہ کورونا وائرس سے کوئی موت نہیں ہوئی جبکہ صوبے میں سرکاری سطح پر مصدقہ یومیہ کیسز کی تعداد گزشتہ ایک ہفتے میں 500 سے کم ہوگئی ہے۔

News Source

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں