سندھ حکومت نے سالانہ امتحانات کے طریقے اور دورانیے میں تبدیلی کر دی

کراچی: عالمی وبا کے پیش نظر سندھ حکومت نے اسکولوں اور کالجز میں سالانہ امتحانات کے طریقے اور دورانیے میں تبدیلی کر دی ہے۔

وزیر تعلیم سندھ سعید غنی کی زیر صدارت صوبائی اسٹیرنگ کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں تعلیمی اداروں میں تدریسی عمل کی بحالی اور امتحانات سے متعلق پالیسی پر تفصیلی غور کیا گیا۔

اجلاس کے بعد میڈٰیا کو بریفنگ دیتے ہوئے سعید غنی نے کہا سرکاری کالجز کے عملے کے 13 ہزار 750 وبا کے ٹیسٹ کرائے ہیں اور ان میں سے 200 افراد کے متاثر ہونے کی رپورٹ ملی ہے جبکہ کراچی کے کچھ کالجز میں وبا کے کیسز سامنے آئے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ ابھی بھی کراچی کے دو کالج وبا کی وجہ سے بند ہیں اور سندھ کے تمام اسکولوں کو یکم فروری سے کھل جائیں گے جبکہ روان برس تعلیمی اداروں میں موسم گرما کی تعطیلات صرف جولائی میں ہوں گی اور سندھ میں نیا تعلیمی سال دو اسگت سے شروع ہو گا۔

سعید غنی نے کہا اس سال بچوں کو امتحانات کے بغیر اگلی جماعت میں ترقی نہیں دی جائے گی اور نرسری سے آٹھویں جماعت کے امتحانات 7 جون سے شروع ہوں گے جبکہ نویں اور دسویں جماعت کے امتحانات یکم جولائی سے 15 جولائی تک جاری رہیں گے۔ گیارہویں اوربارہویں جماعت کے امتحانات کا آغاز 28 جولائی سے ہو گا اور امتحانات کے دوران ایس او پیز کا خاص خیال رکھا جائے گا۔ تمام تعلیمی بورڈز امتحانات کے نتائج 90 روز میں تیار کریں گے۔ نویں اور دسویں جماعت کے نتائج 15 ستمبر جب کہ 11ویں اور 12ویں جماعت کے نتائج 15 اکتوبر کو جاری ہوں گے جبکہ کوئی کالج 15 اکتوبر سے پہلے داخلہ نہیں دے سکے گا۔

صوبائی وزیر تعلیم نے کہا کہ طلبہ کے سہولت کے لئے امتحانات کے طریقہ کار میں تبدیلی کی گئی ہے اور نویں تا بارہویں جماعت کے پریکٹیکلز جون میں اسکولوں اور کالجوں میں ہی ہوں گے۔ پرچے کے لئے 3 گھنٹے کے بجائے اب دو گھنٹے کا وقت ہو گا اور ایم سی کیوز کو 50 فیصد کر دیا گیا ہے جبکہ 30 فیصد تفصیلی اور 20 فیصد مختصر سوالات دیئے جائیں گے۔

Source

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں