چاکلیٹی ہیرو وحید مراد کو مداحوں سے بچھڑے 37 برس بیت گئے

ویب ڈیسک :ماضی کے مشہور اداکار اور لالی ووڈ کےچاکلیٹی ہیرو وحید مراد کو مداحوں سے بچھڑے 37 برس گزر گئے ۔
وحید مراد 2 اکتوبر 1938 کوسیالکوٹ میں پیدا ہوئے۔ وحید مراد فلم تقسیم کار نثار مراد کے اکلوتے بیٹے تھے۔ پاکستان کی تاریخ میں کبھی کسی ہیرو کو اتنی پذیرائی حاصل نہیں ہوئی جتنی وحید مراد کے حصہ میں آئی۔ وحید مراد کا ہر اندازنرالا تھا اور فلم میں کردار جاندار تھا۔پروڈیوسر کے طور پر وحید مراد نے اپنے والد کے قائم شدہ فلم آرٹس کے تحت فلم “انسان بدلتا “ہے سے اپنے کیریئرکا آغاز کیا۔ اس کےبعد انہوں نے فلموں میں اپنے اداکاری کے جوہر دکھائے اور بطور اداکار وحید مراد کی پہلی فلم “اولاد” اگست 1962ء میں ریلیز ہوئی جس میں وحید مراد نے بطور سپورٹنگ ایکٹر اپنا کردار ادا کیا ۔ 1964 میں” ہیرا پتھر”خود پروڈیوس کی اور مرکزی کردار ادا کیا۔ ان فلموں کے منظر عام پر آنے کے بعد وحید مراد کی بہترین ادکاری نے انہیں بے انتہا مقبولیت دی ۔ وحید مراد کی1966 میں بنے والی فلم “ارمان” نے باکس آف کے تمام ریکارڈ توڑ دیئے۔ چاکلیٹی ہیرو کو اصل شہرت اپنی ذاتی فلم ’ہیرا اور پتھر‘ سے حاصل ہوئی جبکہ وحید مراد کو پاکستان کی پہلی پلاٹینیم جوبلی فلم “ارمان‘”کا فلم ساز، مصنف اور ہیرو ہونے کا اعزاز بھی حاصل ہے۔
1967 میں، انہوں نے دیور بھابی، دوراہا، انسانیت اور ماں باپ جیسی لازوال فلموں میں معروف اداکاری کیا ۔ سینما گھروں میں 50 ہفتے مکمل کرنے والی فلم “دیور بھابی” ان کی بہترین فلموں میں سے ایک سمجھی جاتی ہے۔ فلم “انسانیت” میں وحید مراد نے ایک سرشار ڈاکٹر کا کردار ادا کیا ہے ۔ اس کے علاوہ وحید مراد نے دیگر اور فلموں میں اداکاری کی ۔ ان کے پرستاروں نے ان کا لباس، انداز اور ہیئر اسٹائل تک کاپی کیا۔
وحید مراد نے 124 فلموں میں اداکاری کے جوہر دکھائے جن میں ایک پشتو اور آٹھ پنجابی فلمیں بھی شامل ہیں۔ انہوں نے فلم” سمندر”اور “اشارہ”میں اپنی آوازکا جادو بھی جگایا، 1980 میں وحید مراد ایک حادثے کا شکار ہوگئے جس کی وجہ سے ان کا چہرہ شدید زخمی ہوگیا اور پلاسٹک سرجری کروانا پڑی اور 23 نومبر1983 کو صرف 45 برس کی عمر میں فلم انڈسٹری کا بے تاج بادشاہ خالق حقیقی سے جا ملا۔
انہیں فلم “ہیرا اور پتھر”، “ارمان”، “عندلیب “اور “مستانہ ماہی” میں بہترین اداکاری پر نگار ایوارڈ، جبکہ 2002 میں لائف ٹائم لیجنڈ ایوارڈ سے نوازا گیا۔ ان کی وفات کے 27 سال بعد 2010 میں انہیں ستارہ امتیاز سےبھی نوازا گیا۔خوبصورت شخصیت ، دلکش آواز اور صلاحتیوں کی بدولت وحید مراد نے لاکھوں لوگوں کے دلوں پر راج کیا ۔

Source

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں