سندھ حکومت نے جے آئی ٹی رپورٹس جاری کر دیں

کراچی:سندھ حکومت نے سانحہ بلدیہ،عزیر بلوچ اور نثار مورائی کی جے آئی ٹی رپورٹس پبلک کر دیں۔
حکام کےمطابق سندھ حکومت کی جانب سے سانحہ بلدیہ،عزیر بلوچ اور نثار مورائی کی جے آئی ٹی رپورٹس محکمہ داخلہ سندھ نے اپنی ویب سائٹ پر جاری کیں جس کےبعد محکمہ داخلہ سندھ کی ویب سائٹ بند ہو گئی۔یاد رہےکہ پیپلز پارٹی رہنماؤں کے دعوے سامنے آئے تھے کہ عزیر بلوچ کی کے آئی ٹیز رپورٹس میں پیپلز پارٹی کی قیادت کا ذکر نہیں ہے۔
عزیر بلوچ کی جے آئی ٹی رپورٹ 35 صفحات پر مشتمل ہے اورعزیر بلوچ کی جے آئی ٹی میں 198 افراد کے قتل میں ملوث ہونے کا انکشاف ہے، بلدیہ فیکٹری میں آتشزدگی کی رپورٹ 26 صفحات پر مشتمل ہے اور کہا گیا کہ بلدیہ ٹاؤن کی فیکٹری میں آتشزدگی حادثہ نہیں دہشتگردی تھی،ایم کیو ایم رہنما حماد صدیقی اور رحمان بھولا نے 20 کروڑ روپے بھتہ نہ دینے پر آگ لگائی،پولیس نے مقدمہ اور تحقیقات میں ملزموں کو جان بوجھ کر فائدہ پہنچانے کی کوشش کی،دہشتگرد کارروائی کو ایف آئی آر میں پہلے قتل رپورٹ کیا پھر حادثہ قرار دیا گیا جبکہ ابتدائی تحقیقات کے دوران ایف آئی آر یا تفتیش میں بھتے کا ذکر نہیں کیا گیا۔
واضح رہے کہ صوبائی حکومت کی جانب سے اعلان کیا گیا تھا کہ آج تینوں جے آئی ٹی رپورٹس جاری کر دی جائیں گی۔

News Source

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں