اپوزیشن استعفیٰ دے، ہم آج االیکشن کرائیں گے، امیدوار تیار ہیں : شیخ رشید

فیصل آباد: وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے کہا ہے کہ اپوزیشن استعفیٰ دے، ہم آج االیکشن کرائیں گے، لیکن یہ نہ استعفیٰ دیں گے، نہ دھرنا اور نہ عدم اعتماد لائیں گے۔
میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر شیخ رشید کا کہنا تھا ،اپوزیشن کہتی ہے نہیں ملے اب تو وہ بھی کہتے ہیں ہم ملے ہیں ،محمد زبیر کی آرمی چیف سے کوئی دوستی نہیں ہے، محمد زبیر کی 36 سال سے قمر جاوید باجوہ سے ملاقات نہیں ہوئی، ان کی اب ملاقات ہوئی ہے، میں اسد عمر کے بیٹے کی شادی میں جنرل کیساتھ بیٹھا تھا ، اس نے خود وقت لیا ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ کیا آرمی چیف سے ملنا اعزاز نہیں ہے؟ کیا ڈی جی آئی ایس آئی سے ملنا اعزاز نہیں ہے؟ مولانافضل الرحمان اوربلاول بھٹوآرمی چیف سے مل چکے ہیں، مولانا فضل الرحمان نے آرمی چیف سے ون آن ون ملاقات کی۔انہوں نے کہا کہ فضل الرحمان اس وقت ملک میں فساد چاہتا ہے، ہر ہفتے ایک سیاستدان کو ایکسپوز کروں گا۔جہاں اے پی سی تقریر کرے گی میں وہاں اگلے دن جلسہ کروں گا،پاکستان میں ٹی وی کی سب سے بڑی پارٹی شیخ رشید ہے ،میں اکیلی سیٹ کا لیڈر ہوں ۔
شیخ رشید نے کہا کہ کوئی تبدیلی نہیں آرہی ، پیپلزپارٹی استعفیٰ نہیں دی گی، یہ مارچ میں نہیں چاہتے کہ عمران خان سینیٹ سے اکثریت لے ، انہوں نے کہا کہ اگر استعفیٰ دیا تو سندھ سے حکومت بھی جائے گی، دو استعفیٰ، ہم آج ہی الیکشن کرائیں گے، اپوزیشن نہ استعفیٰ دے گی نہ دھرنا دے گی اور نہ ہی تحریک عدم اعتماد لائے گی، فضل الرحمان کو منہ کی کھانا پڑے گی۔ وزیر ریلوے نے کہا کہ سابق حکمرانوں نے ملک کو دونوں ہاتھوں سے لوٹا۔ وزیراعظم عمران خان نے واضح کر دیا ہے کہ میں اقتدار چھوڑ سکتا ہوں لیکن شریف برادران کو کبھی این آر او نہیں دونگا۔انہوں نے لیگی قائدین پر کڑی تنقید کی اور کہا کہ نواز شریف نے اپنی سیاست کی خود قبر کھودی ہے نواز شریف ضیا الحق کی گود میں جوان ہوکر اسی فوج کو آنکھیں دکھا رہا ہے جس کی بدولت ایکسائز اینڈ ٹیکسائز کا وزیر بنا ،10ماہ تک مریم کا ٹویٹر خاموش رہا ،ایک سال تک نواز شریف کا منہ بند رہا اس کو معلوم تھا ایسے حالات بن جائیں ہماری جان چھوٹ جائے ۔ وفاقی وزیر نے دعویٰ کیا کہ جنوری میں ن سے ش نکلے گی اور میں اس پر قائم ہوں۔
وفاقی وزیر ریلوے کا کہنا تھا کہ بلاول سے پیار کرتا ہوں، وہ میرا پیارا ہے، بلاول سے پوچھیں میں نے اس کا کیا بگاڑا ہے، اگر بلاول کی والدہ زندہ ہوتیں تو بتاتیں کہ شیخ رشید کس چیز کا نام ہے، میں نے اکیلے ہی لیاقت باغ میں بھٹو کا جلسہ پلٹ دیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ بلاول کہتے ہیں کہ اگر شیخ رشید جس میٹنگ میں ہوگا تو نہیں جاؤں گا۔ میں انھیں جواب دے سکتا ہوں لیکن اخلاق کے دائرے کو کراس نہیں کرنا چاہتا۔ وہ پیدا بھی نہیں ہوئے تھے، جب قومی سلامتی کمیٹی کا ممبر تھا۔

News Source

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں