بلوچستان میں دہشت گردوں کا حملہ ، 14سکیورٹی اہلکار شہید

راولپنڈی : ،اورماڑہ میں سکیورٹی فورسز اور دہشتگردوں کے درمیان جھڑپ میں سات ایف سی اہلکاراور سات سکیورٹی گارڈز شہید جبکہ بارودی سرنگ دھماکے میں کیپٹن اور پانچ جوان شہید ہوگئے ۔
آئی ایس پی آر کے مطابق ملک دشمنوں نے گوادر سے کراچی جاتے ہوئے او جی ڈی سی ایل کے قافلے پر حملہ کیا۔ جس میں سیکیورٹی فورسز نے او جی ڈی سی ایل کے ملازمین کی علاقے سے بحفاظت انخلا کو یقینی بنایا ہے۔ دہشتگردوں سے جھڑپ میں سات ایف سی اہلکاراور سات سکیورٹی گارڈز شہید ہوگئے۔شہید ہونے والوں میں صوبیدار عابد حسین کا تعلق لیہ سے تھا۔ آئی ایس پی آر کے مطابق شہدا میں سبی کے نائیک محمد انور اور ڈی جی خان کے لانس نائیک افتخار احمد ، سپاہی محمد ندیم، محمد وارث ، لانس نائیک عبدالطیف شامل ہیں۔ اس کے علاوہ شہدا میں سپاہی عمران خان ، شہید حولدار ریٹائرڈ سمندر خان اور شہید محمد فواد اللہ کا تعلق لکی مروت سے تھا۔آئی ایس پی آر کے مطابق ڈی آئی خان سے عطااللہ ، ٹانک کے وارث خان ، کوہاٹ کے عبدالنافع ،بنوں کے عابد حسین اور کوہاٹ کے شاکر اللہ نے بھی جام شہادت نوش کیا ہے۔
پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے مطابق سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے کر سرچ آپریشن شروع کردیا ہے۔آئی ایس پی آر کے مطابق دشمنوں کی بزدلانہ کارروائیاں بلوچستان کے امن و استحکام اور ترقی کو نہیں روک سکتی ہیں۔پاک فوج نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ ملک دشمن عناصر کی بلوچستان میں بدامنی پھیلانے کی کوششوں کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔

اس سے قبل دہشت گردوں کا پہلا حملہ شمالی وزیرستان میں واقع بارودی سرنگ میں ہوا جہاںدھماکے سے1 افسر اور 5 جوان شہید ہو ئے ،پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق شہید ہونے والوں میں 24 سالہ کیپٹن عمر فاروق ،37 سالا نائب صوبیدار ریاض احمد ،44 سالہ نائب صوبیدار شکیل آزاد ، 36 سالہ حوالدار یونس خان ،37 سالہ نائیک محمد ندیم اور 30 سالہ لانس نائیک عصمت اللہ شامل ہیں ۔

News Source

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں