مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کی ریاستی دہشتگردی،4کشمیری شہید

سرینگر: مقبوضہ کشمیر میں قابض بھارتی فوج کی ریاستی دہشتگردی جاری ہے اور بھارتی فوج نے بربریت کا مظاہرہ کرتے ہوئے مزید4کشمیری شہید کر دیے۔
کشمیر میڈیا سروس کےمطابق جنت نظیر وادی کشمیر میں قابض بھارتی فوج نے نام نہاد سرچ آپریشن کیا اور بھارتی فوج نے بربریت کا مظاہرہ کرتے ہوئے مزید4کشمیری شہید کر دیے۔کشمیری نوجوانوں کو ضلع کلگام اور پلوامہ میں نام نہاد سرچ آپریشن کے دوران شہید کیاگیا ۔دوسری جانب نہ معلوم افراد کی فائرنگ سے 14سالہ کشمیری لڑکا زخمی بھی ہوا۔
واضح رہے کہ 5 اگست2019 کو مودی سرکار نے کشمیر کو خصوصی حیثیت دینے والے بھارتی آئین کے آرٹیکل 370 اے کو ختم کر کے مقبوضہ وادی میں کرفیو نافذ کر دیا تھا اور بھارت نے کشمیریوں کی نقل وحرکت پر پابندی عائد کر رکھی ہےجبکہ بھارتی شہریوں کو مقبوضہ کشمیر میں جائیداد خریدنے اور وہاں رہنے کا حق بھی دے دیا گیا ہے۔ایک رپورٹ کےمطابق گذشتہ6ماہ کے دوران بھارتی فوجیوں نے پرتشدد گشت اور سرچ آپریشن کے دوران 148 کشمیریوں کو شہید کیا۔ان ہلاکتوں میں دو خواتین بیوہ اور چار بچے یتیم ہوگئے،پرامن مظاہرین پر بھارتی فوجیوں اور پولیس اہلکاروں کی طرف سے گولیوں ، چھروں اور آنسو گیس کی شیلنگ سےسولہ افراد زخمی ہوئے،ہندوستانی پولیس اور نیم فوجی دستوں نے ایک ماہ میں مختلف علاقوں میں 567 سرچ آپریشن کے دوران 88 افراد کو گرفتار کیا اور 14رہائشی مکانات کو تباہ یا نقصان پہنچا۔ دوسری جانب بھارتی حکام نے مقبوضہ کشمیرمیں میں 21 اکتوبر تک انٹرنیٹ سروس پر پابندی بڑھا دی ہے۔

News Source

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں