سوئز کینال میں بحری جہازوں کی آمدورفت ایک بار پھر شروع

مصر کی سوئز کینال میں بحری جہازوں کی آمدورفت ایک بار پھر شروع ہوگئی۔اب تک سو سے زائد بحری جہازسوئز کینال پار کرچکے ہیں ۔جبکہ تقریباً 140مزیدبحری جہازآج یہ نہرپار کریں گے۔

غیر ملکی خبر ایجنسی کے مطابق بحری جہاز پھنسنے کی اصل وجہ کیا بنی تھی؟حکام کی جانب سے واقعے کی تہہ تک جانے کیلئے تحقیقات کا آغاز کردیاگیا۔بحری جہاز کی ٹیکنیکل اور کمیونی کیشن ریکارڈنگز بھی دیکھی جائیں گی۔

سوئز کینال حکام کاکہناتھاکہ یہ پہلا موقع ہے کہ بحری جہاز سے کنٹینر اتارے بغیر ریسکیو آپریشن کیاگیاہے۔اگر یہ جہاز کہیں اور پھنساہوتا تو اسے نکالنے میں مہینوں لگ جاتے۔مستقبل میں ایسے کسی مسئلےسے نمٹنےکیلئے ہم اپنی صلاحیتیں بڑھائیں گے۔

ادھرمصر کے صدر کاکہناتھاکہ یہ راستہ بند ہونے سے سوئز کینال کی اہمیت دوبارہ واضح ہوگئی ہے۔

واضح رہے کہ نہر سوئز دنیا کے مصروف ترین تجارتی راستوں میں سے ایک ہے گزشتہ دنوں وہ بری طرح بلاک ہو گئی تھی اور جہاز رانی کی کمپنیوں کو اپنے بحری جہازوں کا راستہ تبدیل کرنا پڑا اس بحری جہاز کے پھنسنے کی وجہ سے عالمی سطح پر سامان کی آمد و رفت میں تاخیر کا سامنا کرنا پڑا۔

Source

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں