سینئرز سے مشورہ لیتا رہوں گا لیکن میدان میں فیصلے خود کروں گا:بابر اعظم

لاہور: قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم نے کہا ہے کہ ٹیسٹ فارمیٹ کی کپتانی ملنے کا پریشر نہیں ہے، سینئرز سے مشورہ لیتا رہوں گا لیکن میدان میں فیصلے خود کروں گا۔

لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے قومی کرکٹ ٹیم کے کپتان بابر اعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان ٹیم 23 نومبر کو نیوزی لینڈ جا رہی ہے،ہم پر اعتماد ہیں، نیوزی لینڈ کے خلاف اچھا آغاز کرنے کی کوشش کریں گے، جب بھی کوئی ضرورت پڑی سیکھوں گا،بیٹنگ پر کوئی پریشر نہیں ہے،کوشش کرتا ہوں ایک سٹیپ آگے لیکر جاؤں،اپنا سو فیصد دینے کی کوشش کرتا ہوں،پریشر میں کھیلنے کا مزہ آتا ہے، بیٹنگ میں مزید اچھا پرفارم کروں گالیکن رنز صرف بابر اعظم نے نہیں کرنے،کبھی اظہر علی کرے گا تو کبھی حارث سہیل، یہ نہیں ہوتا کہ سب کے سب پرفارم کریں،نوجوان کرکٹرز کو سپورٹ کرنا پڑتا ہے، ہر کرکٹر اسٹرگل کرتا ہے، میں نے ٹیسٹ میں آغاز میں اسٹرگل کیا لیکن مکی آرتھر نے میری حوصلہ افزائی کی اور کہا کہ میں ضرور اچھا کروں گا اور پھر ایسا ہی ہوا، میں نے پرفارم کرنا شروع کیا اور ٹیسٹ میں بھی تسلسل آیا۔

ایک سوال کے جواب میں بابراعظم کا مزید کہنا تھا کہ ٹیسٹ فارمیٹ کی کپتانی ملنے کا پریشر نہیں ہے،سرفراز احمد اور اظہر علی کی کپتانی میں بہت کچھ سیکھنے کو ملا ہے،سینئرز سے مشورہ لیتا رہوں گا لیکن میدان میں خود فیصلے کروں گا،نیا چیلنج ہے کیونکہ نئی ذمہ داری ملی ہے لیکن مجھ پر کوئی دباؤ نہیں ہے، میں لطف اندوز ہوں گا، میں نے ہمیشہ سیکھنے کی کوشش کی ہے۔

Source

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں