پالیسی کی تبدیلی صارفین کی پرائیویسی پراثرانداز نہیں ہوگی :واٹس ایپ کی وضاحت

ویب ڈیسک : معروف سوشل میڈیا موبائل ایپلی کیشن واٹس ایپ نے پرائیویسی پالیسی کے حوالے سے تمام افواہوں کی تردید کرتے ہوئے پرائیویسی پروضاحت جاری کردی ہے۔
تفصیلات کے مطابق دنیا بھر سے واٹس ایپ کو پرائیویسی پالیسی کی تبدیلی کے بعد سے شدید تنقید کاسامنا کرناپڑرہا ہے تاہم واٹس ایپ نے ان تمام افواہوں کی تردید کرتے ہوئے پرائیویسی پالیسی کومحفوظ بنانے کی یقین دہانی کروائی ہے۔ واٹس ایپ کے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے جاری ٹوئٹ میں بتایا گیا ہے کہ پرائیویسی پالیسی کی تبدیلی صارفین کی پرائیویسی پر اثر انداز نہیں ہوگی ۔ واٹس ایپ کے مطابق اس نئی پرائیویسی کو اگر پڑھیں تو پیغامات کی ‘اینڈ ٹو اینڈ انکرپشن’ کو ختم کرنے کی بات موجود نہیں ہے اور اس سے دو افراد کے درمیان ہونے والی گفتگو واٹس ایپ سمیت کوئی تیسرا فرد یا ادارہ نہیں دیکھ سکتا ہے، واٹس ایپ صارفین کی نجی چیٹ، کانٹیکٹ اور ڈیٹا کومحفوظ رکھتا ہے۔
واٹس ایپ کی جانب سے جاری وضاحتی ٹوئٹ میں بتایا گیا ہے کہ واٹس ایپ پر کی جانے والی چیٹ اور کالز تک نہ ہی واٹس ایپ کی رسائی ہے نہ ہی کسی اور ایپلی کیشن خصوصاً فیس بک کی ، اور واٹس ایپ گروپ پرائیوٹ ہی رہیں گے جبکہ لوکیشن کا بھی فیس بک سے کوئی سروکارنہیں ہوگا۔صارف اپنا ڈیٹا ڈاون لوڈ بھی کرسکتے ہیں ۔

خیال رہے کہ واٹس ایپ نے نئی پرائیویسی پالیسی کا اعلان کیا تھا جس کے مطابق واٹس ایپ صارفین کی معلومات تھرڈ پارٹی بشمول فیس بک کے ساتھ شیئر کر سکے گا۔ اس سے قبل واٹس ایپ کے سربراہ وِل کیتھکارٹ نے نئی پرائیویسی پالیسی پر شدید ردعمل کے بعد وضاحتی بیان بھی جاری کیا تھا ۔

Source

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں