خشک جلد کی ديکھ بھال۔

خشک جلد ۔
اس طرح کی جلد ميں چکنائی اور نمی کی کمی ہوتی ہے، جس کی وجہ سے جلد کا رنگ نارمل نہيں رہتا، دھونے پر کھچی کھچی سی رہتی ہے، موسم کا اثر بھی اس قسم کی جلد پر زيادہ ہوتا ہے، گرمی، نمی کی کمی اور سردی ميں چکنائی کی کمی ہوجاتی ہے، ايسی جلد پر عمر کا اثر بھی جلد دکھائی دينے لگتا ہے۔

خشک جلد کی ديکھ بھال۔

دن ميں دو تين بار چہرے کی اچھی طرح صفائی کريں، چہرہ دہونے کے لئے صابن کے بجائے قدرتی ذرائع بيسن يا آٹے کا استعمال کريں۔
چہرے کو سورج کی الڑا وائيلٹ کرنوں سے بچائيں، اس کے لئے دھوپ ميں نکلتے وقت چھتری کا استعمال کريں۔

گہرا ميک اپ نہ کريں، گہرا ميک اپ، جلد کے مساموں کو بند کرديتا ہے، جس کی وجہ سے جلد سے نکلنے والا پسينہ ٹھيک طرح سے نہيں نکل پاتا اور جلد کو آکسيجن نہيں مل پاتی ۔
جلد کی تازگی کے لئے ہفتے ميں ايک بار ابٹن ضرور لگائيں۔
وٹامن اے، بی، سی، ڈی وغيرہ سے بھر پور غذا کا استعمال کريں۔

خشک جلد کے لئے نسخے۔

ايک پختہ کيلا لے کر اچھی طرح مسل ليں، اس ميں ايک چمچہ شہد ملا ليں، اب آہستہ آہستہ نيچے سے اوپر کي طرف مالش کرتے ھوئے اسے چہرے اور گردن پر لگائيں، دس پندرہ منٹ کے بعد منرل واٹر سے چہرے اور گردن کو صاف کرليں، کيلے ميں وٹامن، اے، بی، سی، سی، کيلشئيم، فاسفورس کاپر، آئرن وغيرہ عناصر کافی مقدارميں پائے جاتے ھيں، جو جلد کو اچھی طرح صاف کرتے ھيں اور جلد کو چکنائی فراہم کرکے لچکيلی اور ملائم بناتے ھيں، شہد ميں موجود عناصر جلد کو توانائی عطا کرتے ہيں۔

ايک ٹماٹر کو کدو کش کرليں، اس ميں ايک چمچہ ملائی ملائيں، اسے اچھي طرح پھينٹ کر سارے چہرے پر لگائيں، دس پندرہ منٹ کے بعد نيم گرم پانی سے چہرے کوصاف کرليں، ٹماٹر ميں وٹامن، اے ، سی، کيلشئيم، فاسفورس، آئرن وغيرہ عناصر موجود ہوتے ہيں، ٹماٹر ميں پائے جانے والا لائيکو پن نامی عنصر فری ريڈ يکلس کو ختم کرتا ہے، ملائی کی موائسچرزازر خوبی جلد کو ملائم اور خوبصورت بناتی ہے، يہ نسخہ ہفتے يں دو بار استعمال کيا جاسکتا ہے۔
پختہ ناشپاتی کا گودا چار چمچہ، ايک انڈے کی زردی ، ان دونوں ميں آدھا چمچہ شہد اچھی طرح ملا کرچہرے پر لگائيں، خشک ہونے کو پاني سے اچھی طرح صاف کرليں، انڈے کی زردی جلد کے مردہ خلئيوں کو نکالتی ہے، اور جلد کو غذائيت فراہم کرتی ہے، ناشپاتی اور شہد خشک جلد کو بھر پور غذا دے کر صاف، خوبصورت اور ملائم بناتے ہيں۔

دو چمچع چقندر کا پيسٹ، دونوں کو اچھی طرح ملا کرچہرے پر لگائیں،دس پندرہ منٹ کے بعد چہرے کو پاني سے دھو ڈاليں، چقندر ميں کافی کيلشئيم فاسفورسم وٹامن، سی، وغيرہ عناصر پائے جاتے ہيں، سيب ميں کيلشئيم، فاسفورس، آئرن، وٹامن سی، پوٹا شئيم وغيرہ عناصر ملتے ھيں، چقندر اور سيب ميں پائے جانے والے اجزاء جلد کی خشکي کو دور کرتے ھيں، سيب ميں پايا جانے وال کيور سٹین نامی عنصر اينٹی آکسی ڈينٹ کا کام کرتا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں